جنت کے پتے از نمرہ احمد

“چیزیں وقتی ہوتی ہیں،ٹوٹ جاتی ہیں،بکھر جاتی ہیں۔ روئیے دائمی ہوتے ہیں،صدیوں کیلئے اپنا اثر چھوڑ جاتے ہیں ۔” “جنت کے پتے “ از نمرہ احمد

حکیم سعید! تمہارا فیصلہ غلط تھا؟

Hakeem Saeed

میرے سامنے میز پر آج کے اخبار بکھرے پڑے ہیں۔ ہر اخبار کی پیشانی کے ساتھ آج کے سب سے بڑے انسان کی تصویر چھپی ہے۔ خون میں نہائی اور حسرت میں ڈوبی ہوئی تصویر، جو ہر نظر سے چیخ مزید پڑھیں

ادبی کانفرنس اور شادی آن لائن

فراز اگر شاعر نہ بھی  ہوتا تو اپنی فقرہ بازی سے روزی کما سکتا تھا۔۔۔۔ شاعر تو وہ اچھا ہے پر بدنام بہت ہے۔۔ اُن دنوں میں ایک بدنام زمانہ ٹیلی ویژن شو  ” شادی آن لائن “کی میزبانی کر رہا مزید پڑھیں

مولانا ابو الکام آزاد کا سنِ پیدایئش بہ زبانی مشتاق یوسفی

مشتاق یوسفی

مولانا ابوالکلام آزاد اپنا سنِ پیدائش اس طرح بتاتے ہیں یہ غریب الدیارِ عہد ، ناآشنائے عصر ، بیگانۂ خویش ، نمک پروردۂ ریش ، خرابۂ حسرت کہ موسوم بہ احمد ، مدعو بابی الکلام 1888ء مطابق ذو الحجہ 1305ھ مزید پڑھیں

“ﺟﺐ ﮐﭽﮫ ﻧﮧ ﺑَﻦ ﺳﮑﺎ ﺗﻮ، ﻣِﺮﺍ ﺩﻝ ﺑﻨﺎ ﺩﯾﺎ “

ﮨﻨﺪﻭﺳﺘﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺟﮕﮧ ﻣﺸﺎﻋﺮﮦ ﺗﮭﺎ۔ ﺭﺩﯾﻒ ﺩﯾﺎ ﮔﯿﺎ : ” ﺩﻝ ﺑﻨﺎ ﺩﯾﺎ ” ﺍﺏ ﺷﻌﺮﺍﺀ ﮐﻮ ﺍﺱ ﭘﺮ ﺷﻌﺮ ﮐﮩﻨﺎ ﺗﮭﮯ۔ ﺳﺐ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺣﯿﺪﺭ ﺩﮨﻠﻮﯼ ﻧﮯ ﺍﺱ ﺭﺩﯾﻒ ﮐﻮ ﯾﻮﮞ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﯿﺎ ﺍﮎ ﺩﻝ ﭘﮧ ﺧﺘﻢ، ﻗﺪﺭﺕِ مزید پڑھیں