افسانہ : “آخری شکست” از محمد انس حنیف.

اور مجھے شکست ہو چکی تھی ۔آخری شکست۔۔آخری مات۔۔ کیونکہ اب میرے اندر کوئی بھی مقابلہ کرنے کی ہمت نہیں رہی تھی۔ مجھے لگا شاید میں منہ کے بل گرا تھا‘ شاید نہیں یقینََا میں منہ کے بل ہی گرا مزید پڑھیں

افسانہ : “سودا” از صوفیہ کاشف.

        “آج آپکو دیر تک رکنا پڑے گا میں چاہتی ہوں کہ آپ اپنا کام ختم کر کے ہی جاییں. ہم کوئی بھی کام ہفتہ کی صبح تک نہیں لٹکا سکتے”               مزید پڑھیں

لفظوں کا سناٹا

اس کے جنازے میں چل رہے ہو؟  نہیں! اُٹھ کر توملنا ہے نہیں اُس نے گہری خاموشی ـــــــــــ گونجتا سناٹا “بنتِ ارسلان کے 20لفظ”

دنیا کی آخرت

ﺻﺒﺢ ﺳﮯ ﮐﻮﺛﺮ ﮐﺎ ﺩﻝ ﮔﮭﺒﺮﺍ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ .ﭘﺘﮧ ﻧﮩﯽ ﮐﯿﺎ ﻣﺎﺟﺮﮦ ﺗﮭﺎ , ﺟﻠﮯ ﭘﺎﺅﮞ ﮐﯽ ﺑﻠﯽ ﺑﻨﯽ ﮬﻮئی ﺗﮭﯽ .ﮐﻮئی ﭼﺎﺭ ﺑﺎﺭ ﺗﻮ ﺳﺎﺱ ﭘﻮچھ ﭼﮑﯽ ﺗﮭﯽ . ﭘﺮ ﺑﺘﺎﺗﯽ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﺑﺘﺎﺗﯽ , ﭘﮩﻠﮯ ﺧﻮﺩ ﺗﻮ ﺳﻤﺠھ مزید پڑھیں