افسانہ : “جنت کی چڑیا” از جواد ادریس۔

شام کا سورج غروب ہونے والا تھا،محلے کی گلیوں میں تقریباً اب سب اپنے اپنے گھروں میں تھے،البتہ موٹر سائیکل پرسوار ایک دودھ والا مختلف گھروں میں دودھ دینے میں مصروف تھا، دُور کسی گلی سے ڈھولک کی دھپ کے مزید پڑھیں

افسانچہ : “کیا میں مائیکل بن گیا؟”۔

تحریر :         بلال حسین  وہ دروازے پر کھڑی ہوئی کسی کو سمجھا رہی تھیں اور وہ بے بس بیچارا بھی سمجھانے کی کوشش کر رہا تھا اور احسان مندی کے بوجھ تلے دبا جا رہا تھا ۔ میں اسی مزید پڑھیں

کلمہ سنا کر یقین دلانا پڑا کیونکہ رواداری کو کٹر پن کھا گیا تھا

“بنتِ ارسلان” “میں شاکڈ حالت میں بیٹھی اُسے دیکھ رہی تھی وہ اپنے عقیدے بارے کیا کیا بتاتی رہی مجھے کوئی آوازسنائی نہیں دے رہی تھی بس میرا ذہن یہی سوچ رہاتھا کہ آگاہی عذاب ہوتی ہے” “میں جب اپوا مزید پڑھیں

مضمون خصوصی “ویلنٹائن نامہ:” از عروج بنت ارسلان۔

“بنتِ ارسلان کے قلم سے …. ” “محبت “امر ہونے کا نام ہے اور امر ہونے کے لئے محبت میں محبت پر محبت کے لئے محبت کومرنا ضروری ہوتا ہے”۔ “اور جو محبت میں مر نہیں سکتے وہ شادی شدہ مزید پڑھیں

رمضان کہانی :”اوور ٹائم” ۔۔از محمد یاسر۔،

تحریر : محمد یاسر. “آج؟”, اُس نے کسی قدر اچھنبے سے پوچھتے ہوئے کلائی میں بندھی گھڑی میں وقت دیکھا,شام کے سارھے پانچ بج رہے تھے. “کیوں ممکن نہیں ہے؟”،اُس نے بے حد عجیب لہجے میں پوچھا تھا . “کیسی مزید پڑھیں

ناولٹ : “ہر رگ میں ہے محشر برپا” از ریما علی سید۔

تحریر : ریما علی سیّد ہسَپتال میں بستر پر لیٹا ہوا دنیا کا ہر مریض اپنے لئے شفاء مانگتا ہے،اُس تکلیف سے نجات مانگتا ہے جس نے اُس کے سانس لینے کے عمل تک کو دُشوار بنایا ہوتا ہے،خواہ اس مزید پڑھیں